میری پہلی غزل — بستی بستی افسانے تھے

یہ غزل میں نے 24 جولائی 1991 کو لکھی تھی یعنی تقریبا” 20 سال پہلے

بستی   بستی   افسانے   تھے           ھم کیوں اس کے دیوانے تھے
دل کی باتیں سمجھانے  میں             بیتے     کئی    زمانے    تھے
درد، الزام، رسوائی ، مصیبت              عشق کے  یہ   پیمانے     تھے
جن  لوگوں  نے  پتھر  مارے                وہ     جانے    پہچانے     تھے
کیوں کر ہم اس راہ سے گزرے             دل  پر زخم  جو  کھانے  تھے
ہم   سا  اس  کو چاہنے  والے             کتنے   او ر  نہ  جانے     تھے
ایک  ملنا  تھا  سچا  اس  سے           باقی    سب     بہانے    تھے
غم کو اپنے شعر میں  ڈھالا             دل   کی   داغ   دکھانے   تھے

                   قربت میں یہ معاذ نے دیکھا
دور کی ڈھول سہانے تھے


About MAAZ SIDDIQUI

میرا پورا نام معاذ المساعد صدیقی ہے. میں 1998 سے نیو یارک میں رھائش پذیر ھوں اور سٹی گورنمنٹ کے ایک ادارے Department of Social Services میں ڈائریکٹر (MIS & Reporting ) کے طور پر کام کرتا ہوں. 1987 میں N. E. D. یونیورسٹی کراچی سے مکنیکل انجینئرنگ میں BS اور 2005 میں City Univercity New York سے کمپیوٹر سائنس میں ماسٹر کیا ہے
This entry was posted in غزل and tagged , . Bookmark the permalink.

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s